اپنی آنکھوں کو صحت مند اور خوش رکھنے کے لیے 10 آسان عادات

اپنی آنکھوں کو صحت مند اور خوش رکھنے کے لیے 10 آسان عادات



آنکھوں کی صحت کو اکثر نظر انداز کیا جاتا ہے، لیکن یہ مجموعی بہبود کے لیے بہت ضروری ہے۔ ہماری آنکھیں دنیا کے لیے ہماری کھڑکیاں ہیں، جو ہمیں اپنے اردگرد کی خوبصورتی کو دیکھنے اور تجربہ کرنے کی اجازت دیتی ہیں۔ تاہم، بہت سے لوگ اپنی آنکھوں کی صحت کو اس وقت تک اہمیت نہیں دیتے جب تک کہ وہ مسائل کا سامنا کرنا شروع نہ کر دیں۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق، دنیا بھر میں تقریباً 2.2 بلین لوگ کسی نہ کسی شکل میں بینائی کی خرابی یا نابینا پن کا شکار ہیں۔

آنکھوں کی بیماریوں اور حالات کا پھیلاؤ تشویشناک ہے۔ ڈبلیو ایچ او کا تخمینہ ہے کہ 1 بلین افراد کو بصارت کا سامنا کرنا پڑتا ہے، 517 ملین کو پری بائیوپیا ہے، 253 ملین کو غیر درست اضطراری غلطیوں کی وجہ سے بصارت کی خرابی ہے، اور 36 ملین نابینا ہیں۔ یہ نمبر ہماری آنکھوں کی دیکھ بھال اور اچھی آنکھوں کی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے صحت مند عادات کو اپنانے کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہیں۔

اپنی آنکھوں کو صحت مند اور خوش رکھنے کے لیے 10 آسان عادات

عادت 1: کافی نیند حاصل کریں۔


کافی نیند لینا نہ صرف ہماری مجموعی صحت کے لیے بلکہ ہماری آنکھوں کی صحت کے لیے بھی اہم ہے۔ نیند کے دوران، ہماری آنکھیں آرام کرتی ہیں اور روزمرہ کی سرگرمیوں کے دباؤ سے خود کو ٹھیک کرتی ہیں۔ نیند کی کمی آنکھوں کی خشکی، آنکھوں کی تھکاوٹ اور یہاں تک کہ بینائی کے مسائل کا باعث بن سکتی ہے۔

اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ آپ کو کافی نیند آتی ہے، نیند کا باقاعدہ شیڈول بنائیں اور اس پر قائم رہیں۔ سونے کے وقت کا ایک آرام دہ معمول بنائیں جس میں سرگرمیاں شامل ہوں جیسے کتاب پڑھنا یا گرم غسل کرنا۔ سونے سے پہلے الیکٹرانک آلات استعمال کرنے سے گریز کریں کیونکہ اسکرینوں سے خارج ہونے والی نیلی روشنی آپ کی نیند کے انداز میں خلل ڈال سکتی ہے۔

عادت 2: اچھی حفظان صحت کی مشق کریں۔


صحت مند آنکھوں کو برقرار رکھنے کے لیے اچھی حفظان صحت پر عمل کرنا ضروری ہے۔ اپنے ہاتھوں اور چہرے کو صاف رکھنے سے ان بیکٹیریا اور وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے میں مدد ملتی ہے جو آنکھوں میں انفیکشن کا سبب بن سکتے ہیں۔

اپنی آنکھوں کو چھونے یا آنکھوں کے قطرے یا مرہم لگانے سے پہلے اپنے ہاتھوں کو صابن اور پانی سے اچھی طرح دھو لیں۔ اپنی آنکھوں کو گندے ہاتھوں سے چھونے سے گریز کریں کیونکہ اس سے آپ کی آنکھوں میں نقصان دہ بیکٹیریا داخل ہو سکتے ہیں۔

عادت 3: صحت مند غذا کھائیں۔


صحت مند غذا آنکھوں کی صحت کو برقرار رکھنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔ بعض غذائی اجزاء، جیسے وٹامن اے، سی، اور ای، زنک، اور اومیگا 3 فیٹی ایسڈ، ہماری آنکھوں کی صحت کے لیے ضروری ہیں۔

اپنی خوراک میں ان غذائی اجزاء سے بھرپور غذائیں شامل کریں۔ پتوں والی ہری سبزیاں جیسے پالک اور کیلے، لیموں کے پھل، گری دار میوے اور بیج، مچھلی جیسے سالمن اور ٹونا، اور گاجریں آنکھوں کی اچھی صحت کو فروغ دینے کے لیے بہترین انتخاب ہیں۔

عادت 4: دھوپ کا چشمہ پہنیں اور آنکھوں کی حفاظت کریں۔


ہماری آنکھوں کو نقصان دہ UV شعاعوں اور دیگر خطرات سے بچانا آنکھوں کی اچھی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے بہت ضروری ہے۔ UV شعاعوں کی طویل نمائش سے موتیا بند، میکولر انحطاط، اور آنکھوں کے دیگر حالات کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔

باہر جاتے وقت دھوپ کے چشمے پہنیں جو UVA اور UVB دونوں شعاعوں کو 100% روکتے ہیں۔ مزید برآں، اگر آپ ایسے ماحول میں کام کرتے ہیں جہاں آنکھوں کو چوٹ لگنے کا خطرہ ہو، جیسے کہ تعمیراتی جگہیں یا لیبارٹریز، تو یقینی بنائیں کہ آنکھوں کا مناسب تحفظ پہنیں۔

عادت 5: اسکرین ٹائم سے وقفے لیں۔


آج کے ڈیجیٹل دور میں، ہم میں سے بہت سے لوگ گھنٹوں اسکرینوں کو گھورتے ہوئے گزارتے ہیں، چاہے وہ کام کے لیے ہو یا تفریح ​​کے لیے۔ اسکرین کا طویل وقت آنکھوں میں تناؤ، خشک آنکھیں، دھندلا نظر، اور سر درد کا سبب بن سکتا ہے۔

اپنی آنکھوں پر دباؤ کو کم کرنے کے لیے، 20-20-20 اصول پر عمل کریں۔ ہر 20 منٹ میں، 20 سیکنڈ کا وقفہ لیں اور 20 فٹ دور کسی چیز کو دیکھیں۔ یہ آپ کی آنکھوں کے پٹھوں کو آرام کرنے اور آنکھوں کی تھکاوٹ کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے۔ مزید برآں، اپنی آنکھوں کو چکنا رکھنے کے لیے بار بار پلکیں جھپکنا یقینی بنائیں۔

عادت 6: باقاعدگی سے ورزش کریں۔


باقاعدگی سے ورزش نہ صرف ہماری مجموعی صحت کو فائدہ پہنچاتی ہے بلکہ آنکھوں کی اچھی صحت کو بھی فروغ دیتی ہے۔ ورزش آنکھوں سمیت پورے جسم میں دوران خون کو بہتر بناتی ہے۔ یہ گلوکوما اور عمر سے متعلق میکولر انحطاط جیسے حالات پیدا ہونے کے خطرے کو کم کرنے میں بھی مدد کرتا ہے۔

دن میں کم از کم 30 منٹ، ہفتے میں پانچ دن چہل قدمی، جاگنگ، تیراکی، یا سائیکلنگ جیسی ایروبک مشقوں میں مشغول ہوں۔ مزید برآں، آنکھوں کی مشقیں جیسے دور کی چیزوں اور قریب کی چیزوں پر توجہ مرکوز کرنے سے آنکھوں کے پٹھوں کی طاقت اور لچک کو بہتر بنانے میں مدد مل سکتی ہے۔

عادت 7: ہائیڈریٹڈ رہیں


آنکھوں کی اچھی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے ہائیڈریٹ رہنا ضروری ہے۔ پانی کی کمی سے آنکھیں خشک ہو سکتی ہیں، جو تکلیف، لالی اور بصارت کا دھندلا پن پیدا کر سکتی ہے۔

اپنے جسم اور آنکھوں کو ہائیڈریٹ رکھنے کے لیے دن بھر وافر مقدار میں پانی پینا یقینی بنائیں۔ اگر آپ ایئر کنڈیشنڈ یا گرم ماحول میں بہت زیادہ وقت گزارتے ہیں، تو ہوا میں نمی شامل کرنے کے لیے ہیومیڈیفائر استعمال کرنے پر غور کریں۔

عادت 8: تمباکو نوشی چھوڑ دو


تمباکو نوشی نہ صرف ہمارے پھیپھڑوں اور مجموعی صحت کے لیے نقصان دہ ہے بلکہ اس کے ہماری آنکھوں پر بھی مضر اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ تمباکو نوشی موتیابند، میکولر انحطاط، اور آپٹک اعصاب کو پہنچنے والے نقصان کا خطرہ بڑھاتا ہے۔

اگر آپ سگریٹ نوشی کرتے ہیں تو چھوڑنا ان بہترین چیزوں میں سے ایک ہے جو آپ اپنی آنکھوں کی صحت کے لیے کر سکتے ہیں۔ تمباکو نوشی چھوڑنے میں مدد کرنے کے لیے دوستوں، خاندان، یا صحت کی دیکھ بھال کرنے والے پیشہ ور افراد سے مدد طلب کریں۔

عادت 9: اپنے آنکھوں کے ڈاکٹر کے پاس باقاعدگی سے جائیں۔


آنکھوں کی اچھی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے آنکھوں کا باقاعدہ معائنہ بہت ضروری ہے۔ آنکھوں کے معائنے آنکھوں کی بیماریوں اور حالات کی ابتدائی علامات کا پتہ لگاسکتے ہیں جن میں نمایاں علامات نہیں ہوسکتی ہیں۔

اپنے آپٹومیٹرسٹ یا آپتھلمولوجسٹ کے ساتھ آنکھوں کے باقاعدہ امتحانات کا شیڈول بنائیں۔ ان امتحانات کی تعدد آپ کی عمر، خاندانی تاریخ، اور آنکھوں کی موجودہ حالتوں کے لحاظ سے مختلف ہو سکتی ہے۔

آنکھوں کی طویل مدتی صحت کے لیے ان عادات کو شامل کرنا


ان عادات کو اپنی روزمرہ کی زندگی میں شامل کرنا آنکھوں کی طویل مدتی صحت میں نمایاں طور پر حصہ ڈال سکتا ہے۔ کافی نیند لینے، اچھی حفظان صحت پر عمل کرنے، صحت مند غذا کھانے، دھوپ کے چشمے پہننے اور آنکھوں کی حفاظت کرنے، اسکرین ٹائم سے وقفہ لینے، باقاعدگی سے ورزش کرنے، ہائیڈریٹ رہنے، سگریٹ نوشی ترک کرنے اور اپنے آنکھوں کے ڈاکٹر کے پاس باقاعدگی سے جانے سے، آپ اس بات کو یقینی بنا سکتے ہیں کہ آپ کی آنکھیں صحت مند رہیں۔ اور فعال.

یاد رکھیں کہ جب آنکھوں کی صحت کی بات آتی ہے تو روک تھام ہمیشہ علاج سے بہتر ہوتی ہے۔ ان عادات کو اپنا کر، آپ آنکھوں کی بیماریوں اور حالات پیدا ہونے کے خطرے کو کم کر سکتے ہیں اور آنے والے برسوں تک صاف بصارت سے لطف اندوز ہو سکتے ہیں۔ لہذا، اپنی آنکھوں کی صحت کو ترجیح دینے کا عہد کریں اور آج ہی سے ان عادات پر عمل درآمد شروع کریں۔ آپ کی آنکھیں آپ کا شکریہ ادا کریں گی!

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے